Surah Sad

Irfan-ul-Quran
  • 23پارہ نمبر
  • 88آيات
  • 5رکوع
  • 38ترتيب نزولي
  • 38ترتيب تلاوت
  • مکیسورہ

اس کا نام ص ہے جو پہلی آیت میں مذکور ہے۔ اس کے پانچ رکوع ہیں۔ یہ سورت مکہ مکرمہ میں نازل ہوئی ہے۔ اس سورہ میں انہی تین بیماریوں کا علاج فرمایا جا رہا ہے جن میں اہل مکہ بری طرح مبتلا تھے: وہ حضور علیہ السلام کو نبی ماننے کے لئے ہرگز تیار نہ تھے، حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو نبی نہ ماننے کی ان کے پاس ایک اور دلیل بھی تھی۔ یہ کہتے ہیں کہ سارے جہانوں کا ایک خدا ہے، بھلا خود سوچو کارخانہ کائنات کے وسیع وعریض نظام کو کیا ایک خدا چلا سکتا ہے؟ حضور نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو ان کی اس نادانی اور ان کے اس احمقانہ رویے سے کتنا دکھ ہوتا ہوگا، اللہ تعالیٰ حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو صبر کرنے کا حکم دیتا ہے اور اپنے جلیل القدر انبیاء کے حالات اور انہیں پیش آنے والی مشکلات کا تذکرہ کر کے حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی دلجوئی فرماتا ہے۔

or

اللہ کے نام سے شروع جو نہایت مہربان ہمیشہ رحم فرمانے والا ہے

In the Name of Allah, the Most Compassionate, the Ever-Merciful

قَالَ لَقَدۡ ظَلَمَکَ بِسُؤَالِ نَعۡجَتِکَ اِلٰی نِعَاجِہٖ ؕ وَ اِنَّ کَثِیۡرًا مِّنَ الۡخُلَطَآءِ لَیَبۡغِیۡ بَعۡضُہُمۡ عَلٰی بَعۡضٍ اِلَّا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا وَ عَمِلُوا الصّٰلِحٰتِ وَ قَلِیۡلٌ مَّا ہُمۡ ؕ وَ ظَنَّ دَاوٗدُ اَنَّمَا فَتَنّٰہُ فَاسۡتَغۡفَرَ رَبَّہٗ وَ خَرَّ رَاکِعًا وَّ اَنَابَ ﴿ٛ۲۴﴾

24. داؤد (علیہ السلام) نے کہا: تمہاری دُنبی کو اپنی دُنبیوں سے ملانے کا سوال کر کے اس نے تم سے زیادتی کی ہے اور بیشک اکثر شریک ایک دوسرے پر زیادتی کرتے ہیں سوائے اُن لوگوں کے جو ایمان لائے اور نیک عمل کئے، اور ایسے لوگ بہت کم ہیں۔ اور داؤد (علیہ السلام) نے خیال کیا کہ ہم نے (اس مقدّمہ کے ذریعہ) اُن کی آزمائش کی ہے، سو انہوں نے اپنے رب سے مغفرت طلب کی اور سجدہ میں گر پڑے اور توبہ کیo

24. Dawud (David) said: ‘He has done you a wrong in demanding your ewe to add to his own ewes, and it is true that most of the partners wrong one another except those who believe and do pious deeds, and such people are very few.’ And it occurred to Dawud (David) that We had put him to trial (through that dispute). So he prayed for forgiveness from his Lord and fell down prostrate and turned (to Allah) in repentance.

(ص، 38 : 24)